اجنبی بننےسے پہلے

ہماری روحیں دو مختلف جسموں میں ہیں

اور ہم بارس کی دیوار کے نیچے

پیاسےہیں

تم افق کی طرح رنگ دار ہو

اور میں ایک تیز خواب آور

زہر میں ڈوبا ہوں

اور یوں تمہاری طرف بڑھ رہا ہوں

جیسے کوئی آگ میر پیچھا کررہی ہو

ہوا کے تیز طوفان میں

ہم زیادہ دیر یکجا نہیں رہ سکتے

مگر اجنبی بننے سے پہلے

اپنے ہاتھ

خوابوں سے رنگ دینا چاہتے ہیں

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s